Type to search

نوجوانوں میں پاکستانی فنون لطیف کا زوال

نوجوانوں میں پاکستانی فنون لطیف کا زوال

Balach Khan
Share

ستمبر 2015 میں ایک نورویجن ڈرامے نے تمام یورپی ممالک کے نوجوانوں کی توجہ اس طرح حاصل کی کہ ماضی کے تمام عداد بصارت کے رکارڈ توڑ دئیے۔ اس ایک ڈرامے کی ہداہتکارہ اور اداکاروں کو نوروے کے ریاستی تمغات سے لے کر، برطانوی شاہی خاندان کے افراد سے ملنے کا موقع ملا۔ اس سب کے پیچھے ہدایتکاراہ جولی اینڈیم کی ایک سادہ سوچ تھی؛ ان کے ملک کے نوجوان تمام وقت غیرملکی مواد دیکھتے تھے اور وہ ان کو مقامی مواد کی طرف متوجہ کرنا چاہتی تھیں۔

اس سے پہلے کہ یہ کہانی آگے بھڑے، یہ سوال پیدا ہوتا ہے کہ پاکستانی نوجوانوں اور فنون لطیف کا اس سب سے کیا تعلق واستہ ہے؟ پاکستان میں بھی یہی حال ہے، کتنے فیصد پاکستانی نوجوان پاکستانی ڈرامے دیکھتے ہیں؟ اس میں ان کا کچھ قصور بھی نہیں، جب فنون لطیف و تمثیل کے نام پر ساس بہو کی لڑائی اور دوسری شادی کا رونا دھونا دیکھایا جائے گا تو کون نوجوان انہیں دیکھیں گے۔ زیادہ تر جوان ناظرین غیر ملکی تمثیلات دیکھتے ہیں، جیسے گیم اف تھرونز یا والکینگ ڈیڈ وغیرہ۔ ہم غیر ملکی ڈراموں میں پاکسانیوں کی اچھی نمائندگی تلاش کرتے ہیں مگر حقیقی و صحیح نمائندگی تو ان ساس بہو کی لڑائیوں میں بھی نہیں۔ پاکستان میں کوئی مواد بلخصوص نوجوانوں کے لیئے بنتا ہی نہیں، تمام ڈرامے ادھیڑ عمر خواتین کے لیئے ہوتے ہیں۔ اس سب میں کوئی تعجب نہیں کہ پاکستانی نوجوان مقامی ڈرامے نہیں دیکھتے۔ ایسی صورت میں نوروے کی ہدایتکارہ جولی اینڈم کا ڈرامہ “سکام (یعنی شرم)” ہمارے لئیے ہدایت کا حامل ہے۔

اینڈم نے نوجوانوں کی پسند کو بہتر سمجھنے کے لئیے تحقیقات شروع کی۔ پہلے یہ صرف فنون لطیف سے متعلق، نوجوانوں سے مذکرات تک محدود تھی۔ مگر اس سب کے دوران اینڈم نے اس تحقیقات کی جواب دہندگان کی نجی زندگی تک توسیع کی۔ اس تحقیقات سے یہ معلوم ہوا کہ مسئلہ زوپہلو تھا۔ اول تو یہ کہ نوجوانوں کے مسائل کی نمائندگی کرنے والے اور نوجوانوں کے لئیے بننے والے ڈرامے کم تھے۔ اور جو تھے وہ نوجوانوں کی نمائندگی کم اور ادھیڑ عمر ہدایتکاروں کے نوجوانوں کے متعلق تاثرات کی نمائندگی زیادہ کرتے تھے۔ شعبہ عمرانیات میں اس رجحان کو “بالغ نگاہ” کہتے ہیں، یعنی کسی گروہ کی نمائندگی حقیقت کے زاویے سے نہیں بلکہ ایک دوسرے گروہ کی نگاہ کے زاویے سے ہو رہی ہے۔ اس صورت میں نوجوانوں کی نمائندگی بالغ/ادھیڑ عمر افراد کی نگاہ سے ہو رہی ہے۔

سکام کے مرکزی کردار

کہنے سے مراد کہ جوان لوگ وہ نیک پارسہ مخلوق نہیں جو ہم ٹی وی کے ڈراموں میں دیکھنے کو ملتے ہیں۔ نوجوانوں کی توجہ حاصل کرنے کے لئیے اداکاروں، ہدایتکاروں، اور خاص طور پر مصنفین کو کچھ پوشیدہ و ممنوعہ حقائق پر ڈرامے بنانے پڑھیں گے۔ یہ بات بھی پوشیدہ نہیں کہ اکثر و بیشتر نوجوان منشیات کا استعمال کرتے ہیں اور جوان لڑکیوں کو معاشرے سے بہت سے مسائل کا سامنا ہوتا ہے۔ نوجوانوں میں باہمی تعلقات ہوتے ہیں، کئی نوجوان جنسی شناخت کو لے کر پریشان ہیں۔ ان سب معاملات پر ڈرامے اگر بنیں تو نوجوان کیوں نہ دیکھیں، مگر ٹی وی چینلوں سے امید رکھنا بھی بےمعنی ہے۔ ٹی وی پر جو بھی آئے گا وہ حذف کردہ ہوگا اور حقیقت کو گھونت کر پیش کیا جائے گا کیونکہ ٹی وی چینل ایسے ممنوعہ موضوعات پر بات نہیں کرنا چاہتے۔ ایسے میں اس خلا کو پر کرنے والا طبقہ نوجوان یوٹیوبرز کا ہے۔ یوٹیوب پر روایتی چینلوں جیسی کوئی روک ٹوک نہیں ہوگی، اور مصنفین اور ہدایتکار بھی نوجوان ہوں گے۔ اس کی مثال ہمیں یوٹیوبر تیمور صلاحالدین عرف مورو کے تین اقسات پر مشتمل ڈرامے “سائے” میں ملتی ہے، اس ڈرامے کو نوجوانوں میں خاصی پذیرائی ملی۔ اس سب میں یہ بہت ضروری ہے کہ ایسے ممنوعہ موضوعات پر روشنی ڈالتے ہوئے لہجہ اخلاقیات یا مذہب کا درس دینے کا سا نہ ہو۔ ان موضوعات کو انسانی ہمدردی اور ایک شخصی وقار کے ساتھ دیکھا نا اہم ہے۔

Tags::
Balach Khan
Balach Khan

Balach Khan is the Urdu editor at ProperGaanda and writes articles about Politics, Entertainment and Social Issues. Twitter: @alreadytakenwas

  • 1

You Might also Like

17 Comments

  1. generic albuterol inhaler April 29, 2020

    near topic [url=https://amstyles.com/#]generic albuterol inhaler[/url] honestly chicken such swimming
    albuterol inhaler without dr prescription overall awareness generic albuterol inhaler real silly https://amstyles.com/

    Reply
  2. Ekklcn m May 11, 2020
    Reply
  3. Qdtgit ytasym cheap ed pills ed meds online

    Reply
  4. Dsyqhq wbxjll online ed pills ed meds

    Reply
  5. pills for erection May 25, 2020

    Dwibce krhfkj mens ed pills pills erectile dysfunction

    Reply
  6. cheap ed pills May 27, 2020

    Pcgjvo hcpuav gnc ed pills best erectile dysfunction pills

    Reply
  7. Pmddqr qmvzvo when does cialis go generic generic ed pills

    Reply
  8. Facebook Marketing June 6, 2020

    I very like this blog. Everything is cleared.

    Reply
  9. Estherrix June 12, 2020

    Urlbmt hmvota canadian pharmacy online rx pharmacy

    Reply
  10. Sosqvx lzsleo order levitra

    Reply
  11. Sample viagra June 20, 2020

    Iohicq mfpcli vardenafil coupon

    Reply
  12. Buy no rx viagra June 20, 2020

    Udbnld cqyimo buy levitra online

    Reply
  13. Buy viagra com June 27, 2020

    Jfhpyk olguvk sildenafil online new ed pills

    Reply
  14. Viagra approved July 1, 2020

    Itkink fnefjd tadalafil 10 mg online pharmacy

    Reply
  15. Viagra medication July 1, 2020

    Qnrgss owuxbf payday loan lenders virgin casino online nj

    Reply

Leave a Comment

Your email address will not be published. Required fields are marked *