Type to search

آسیہ بی بی کی رہائی، انصاف کی جیت

آسیہ بی بی کی رہائی، انصاف کی جیت

Balach Khan
Share

ء2018 اکتوبر 8، کو عدالت عظمی پاکستان نے آسیہ بی بی توہین رسالت کیس کا فیصلہ محفوظ کیا۔ آسیہ بی بی پچھلے 9 سال سے اس مقدمے میں جیل کاٹ رہی تھی۔ 8 سال پہلے آسیہ بی بی کو شیخوپورہ کی ایک عدالت نے سزائے موت سنا دی، جس کے خلاف اپیل عدالت عظمی میں زیر سماعت تھی۔ 31 اکتوبر کی صبح عدالت کے تین رکنی بنچ نے، جسٹس ثاقب نثار کی صدارت میں، آسیہ بی بی کو تمام دفعات سے بری کردیا۔

Asia Bibi with her family

کیس کی کہانی

جون 2009، شیخوپورہ میں آسیہ بی بی دوسرے محنت کشوں کے ساتھ فالسے کی فسل کی کاشت کر رہی تھی جب اس کو پانی لانے کے لیے کہا گیا۔ آسیہ بی بی نے قریبی کنوئیں سے پانی نکالا اور پاس پڑے پتیلے سے پینے لگی۔ اس پر آسیہ بی بی کی ہمسائی، جس سے اس کی ملکیت کے نقصان پر لڑائی تھی، نے کو برہمی سے کہا کہ وہ مسلمانوں کے برتن استعمال نہیں کر سکتی کیونکہ مسیحی ہونے کی وجہ سے وہ ناپاک ہے۔ اس سے ایک بحث چھڑ گئی مقامی لوگوں نے آسیہ بی بی کے مذہب کے بارے میں نازیبا الفاظ استعمال کیے جس پر اس نے جواب دیا “میں اپنے مذہب اور یسو مسیح میں ایمان رکھتی ہوں۔ مسیح نے انسانیت کے لیے اپنی جان دے دی، تمھارے پیغمبر نے انسانیت کے لیے کیا کیا۔”

آسیہ بی بی اپنے بچوں کے ہمراہ

اس سب کے بعد لوگوں نے مقامی امام سے شکایت کی کہ آسیہ بی بی نے اسلام اور نبی (ص) کی توہین کی۔ انہوں نے اس کے الفاظ کو توڑ مروڑ کر پیش کیا اور اس پر غلط آل زام لگایا۔ ایک ہجوم نے آسیہ بی بی کے گھر کا محاصرہ کرلیا اور اس کے گھر کے افراد پر تشدد کرنے لگے۔ پولیس نے بروقت موقع پر پہنچ کر تمام افراد کو بچایا اور آسیہ بی بی کو گرفتار کر لیا۔ ایک سال کی قید کے بعد عدالت نے آسیہ بی بی کو قصوروار ٹھہرایا اور سزائے موت سنائی۔ اس فیصلے کے خلاف آسیہ بی بی نے نظرثانی کی درخواست دائر کی جو عدالت عظمی تک پہنچی۔

عالمی رد عمل

آسیہ بی بی کی سزائے موت نے عالمی برادری کو توجہ حاصل کی اور تمام مملک اور انسانی حقوق کی تنظیموں نے اس کی مذمت کی۔ پاپائے اعظم بنیڈکٹ سولہ نے آسیہ بی بی کے کیس میں رحم کی درخواست کی۔ اور بیان دیا کہ سب کی مذہبی آزادی کا تحافظ ریاست کی ذمہ داری ہے۔
فرانسیسی صحافی آین اظابیل تولیٹ نے آسیہ بی بی کے شوہر کی مدد سے آسیہ بی بی کی آپبیتی لکھی جس کا عنوان تھا، ایک یادگار: سزائے موت ایک کٹورا پانی پر۔

آسیہ بی بی کی آپبیتی

عوام کا رد عمل

خادم رضوی نے عدالت کا فیصلہ سنانے سے 9 گھنٹے پہلے ایک ویڈیو پیغام میں اپنے پیروکاروں کو ہر قربانی کے لیے تیار رہنے کے لیے کہا اور ملک بھر میں احتجاج کی بھی دھمکی دی اگر آسیہ بی بی کو رہا کیا گیا۔

دوسری طرف، صاحب عقل افرد اس فیصلے کی حمایت کر رہے ہیں اور اسے انصاف کی جیت قرار دے رہیں ہیں۔

اس سب کے درمیان یہ تسلیم کرنا اہم ہے کہ عدالت نے بہادری سے بہت دباو آنے کے باوجود ایک بہترین فیصلہ سنایا ہے۔

Tags::
Balach Khan
Balach Khan

Balach Khan is the Urdu editor at ProperGaanda and writes articles about Politics, Entertainment and Social Issues. Twitter: @alreadytakenwas

  • 1

You Might also Like

4 Comments

  1. chloroquine drug May 19, 2020

    chloroquine drug https://chloroquine1st.com/

    Reply
  2. SEO June 6, 2020

    I very like this blog. Everything is cleared.

    Reply

Leave a Comment

Your email address will not be published. Required fields are marked *